مقاصد

وسائل و امکانات

طریقہ

مراسم عزاداري ايران اورديناكي مختلف ممالك

 

 

مقاصد
پیامبر اعظم نامی سال میں حدیث نبوی سے تبعیت کرتے ہوئے رسول خدا (ص) کے اس فرمان کے مطابق جس میں رسول خدا (ص) نے : قرآن و عترت کو مرکز ثقل قرار دیا ہے۔
باب الحوائج حضرت علی اصغر علیہ السلام سے متوسل ہو کر مندرجہ ذیل بلند مقاصد کی تکمیل کے لیے قدم اُٹھایا ہے۔
1۔ عالمی سطح پر فعال شیعہ تنظیموں اور محبان اہلبیت کی شناخت
2۔ حسینی جذبے کے فروغ اور ان تنظیموں کی فکری و عملی ترقی کے اسباب کی فراہمی
3۔ وحدت و یگانگی کے افکار و جذبے کا فروغ۔
4۔ فکر حسینی کو عملی جامع پہنانے کی زمینہ سازی۔
5۔ قیام حسینی کے جذباتی، حماسی اور عقلی دلائل کی تمایش۔
پوری دنیا کے آزاد لوگوں کے لیے ایک سوال کی ترویج  بای ذنب قتلت!!!!!!!! 

واپس اوپر صفحے پر

وسائل و امکانات:۔

110000 کی تعداد میں ایک شکل کے لباس جس میں سبز پوشاک اور ماتھے کی لال پٹی (پیشانی بند) تیار اور تقسیم ہونگے۔
70 عدد گہوارے(جھولے) ان شہروں میں ارسال کیے جائیں گے جہاں یہ مراسم عزاداری منعقد ہونگے۔
70 عدد بیک گراونڈ اسکیرینزجس کا سائز تقریبا 12 سے 200 مربع میٹر ہو گا۔ مراسم عزاداری کی جگہ سجانے کے لیے ارسال کیے جائیں گے۔
مراسم عزاداری کی خبروں کی کوریج ملک اور بیرون ملک مختلف ٹی وی چینلز اور اخبارات میں کی جائیگی۔
مراسم عزاداری کے اعلانات کے لیے 3000 شیعہ ویب سائٹس سے ہم آ ہنگی کی جائیگی۔
مراسم عزاداری کے اعلانات کے لیے ملکی اور غیر ملکی ٹی وی چینلز پر نیوز بلیٹین ، عربی، انگلش اور اُردو میں چلائی جائینگی۔
3 لاکھ سے زیادہ پوسٹرز اور اشتہار پروگرام میں شرکت کی دعوت کے لیے تقسیم کیے جائیں گے۔

واپس اوپر صفحے پر

پروگرام:۔
تمام ممالک میں پروگرام کا ایک وقت پر آغاز اور اُس کے اغراض و مقاصد مشترک ہیں۔

 اوقات  (ہر سال ماہ محرم کا پہلا جمعہ)
 موجودہ سال 6 محرم 1428 ھ ، بمطابق 26 جنوری 2007 مقامی وقت کے مطابق صبح 9:00 بجے۔
 
طریقہ کار
شیر خوار بچے سبز عربی لباس میں اپنی ماوں کے ساتھ سر پر سبز اسکارف اور ماتھے پر سرخ پٹی جس پر بِای ذنب قُتلت کی عبارت تحریر ہو پروگرام میں داخل ہوں۔
شیر خوار کے ایک جیسے لباس میں ہونے کے بعد تلاوت قرآن مجید کی سورہ مریم کی پہلی ایت سے پروگرام سے آغاز۔

موضوع تقاریر
1۔ شیعیت کا ولایت کے ساتھ قلبی جوش وولولہ اور اُس کی تربیت۔
2۔ ظلم کے خلاف قیام کا جذبہ اوراحساس ولایت کو ابھارنا۔
3۔ حضرت صاحب الزمان (عج) جو کہ حقیقی انتقام لینے والے ہیں انسانیت کو ان کی جانب ہدایت کرنا۔

با مقصد عزاداری
مظلومیت حسین (ع) پر لوگوں کی توجہ و عقیدت کو مرکوز کرنا جس کا گواہ اُن کے شیر خوار (ع) کی مظلومانہ شہادت ہے۔

واپس اوپر صفحے پر

عزاداری علی اصغر علیہ السلام عالمی سطح پر۔

واپس اوپر صفحے پر